آئی ایم ایف معاہدے پر غور کیلئے وزیر اعظم نے اجلاس طلب کرلیا

شیئر کریں

وزیراعظم عمران خان نے آئی ایم ایف سے معاہدے اور ایمنسٹی سکیم پر غور کے لیے آج اہم اجلاس طلب کرلیا۔

آئی ایم ایف کے اعلامیے کے مطابق پاکستان کو 6 ارب ڈالر 39 ماہ میں قسطوں میں جاری کیے جائیں گے۔ ‏معاہدے پر عمل درآمد آئی ایم ایف کے ایگزیکٹو بورڈ کی توثیق کے بعد کیا جائے گا۔

آئی ایم ایف اعلامیے کے مطابق پاکستان آئندہ بجٹ کے خسارے میں صفر اعشاریہ 6 فیصد کمی لائے گا اور ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر کا تعین مارکیٹ کے طے کرنے سے مالی شعبے میں بہتری آئے گی۔

مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ 300 یونٹ سے کم والے صارفین کے لیے 216 ارب روپے سبسڈی رکھی جائے گی اور سماجی بہبود کے لیے 180 ارب روپے رکھے جائیں گے۔

مشیر خزانی عبدالحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ امیر طبقے کے لیے سبسڈی ختم کرنا ہوگی اور کچھ شعبوں میں قیمتیں بھی بڑھانی ہوں گی۔ انہوں نے کہا کہ 300 یونٹ سے کم والے صارفین کے لیے 216 ارب روپے سبسڈی رکھی جائے گی اور سماجی بہبود کے لیے 180 ارب روپے رکھے جائیں گے۔


انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف حیثیت کے مطابق اخراجات کرنے کو کہے تو یہ پاکستان کے مفاد میں ہے، بہت سے معاملات پاکستان میں درست طریقے سے نہیں نمٹائے گئے اور بہت سے شعبوں میں حیثیت سے زیادہ اخراجات کیے گئے۔

مشیر خزانہ کے مطابق آئی ایم ایف سے معاہدے کواصلاحات اور اسٹرکچر تبدیلی کے لیے استعمال کیا جانا چاہیے، پاکستان کو پائیدار خوشحالی کی طرف لیکر جانا چاہتے ہیں تو اسٹرکچر تبدیلی کرنا ہوگی۔ 


شیئر کریں