عمران خان سمیت 12 سیاستدانوں کو خطرہ، نیکٹا نے الرٹ جاری کر دیا

شیئر کریں

نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم اتھارٹی (نیکٹا) کی جانب سے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس میں 6 سیاسی رہنماؤں کے نام پیش کئے گئے ہیں جنہیں ممکنہ طور پر انتخابی مہم کے دوران نشانہ بنائے جانے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

ان 6 افراد میں پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان، عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما اسفند یار ولی اور امیر حیدر ہوتی، قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب احمد خان شیر پاؤ، جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ اکرم خان درانی اور جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید کے صاحبزادے اور الیکشن کے اُمیدوار طلحہ سعید کے نام شامل ہیں۔

واضح رہے کہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کا اجلاس سینیٹررحمٰن ملک کی زیر صدارت منعقد ہوا، جس میں مجموعی طور پر ملک کی داخلی صورتحال کے ساتھ آئندہ عام انتخابات کے تحت سیکیورٹی معاملات کا جائزہ لیا گیا۔

سینیٹ میں قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کو بریفنگ دیتے ہوئے نیکٹا کے ڈائریکٹر عبید فاروق کا کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماؤں کو بھی خطرات لاحق ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ نیکٹا کی جانب سے وفاقی وزارت داخلہ سمیت صوبوں کے محکمہ داخلہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو 12 خطرات کے الرٹ جاری کیے جاچکے ہیں۔


شیئر کریں