نواز شریف، مریم نواز اور محمد صفدر کی ملاقات

شیئر کریں

اڈیالہ جیل میں قید سابق وزیر اعظم نواز شریف اور مریم نواز کی ان کے وکلا سے ملاقات منسوخ کردی گئی ہے۔ اڈیالہ جیل میں آج قیدیوں سے ملاقات کا دن ہے۔ ان ملاقات کا وقت صبح 8 بجے سے شام چار بجے تک رکھا گیا ہے۔ ہر ملاقاتی کو صرف 20 منٹ ملاقات کی اجازت دی گئی ہے۔

جیل حکام کا کہنا تھا کہ تینوں قیدیوں سے ملاقاتیں جیل مینول کے مطابق کرائی جارہی ہیں، ہر ملاقات سے قبل میاں نوازشریف کی مرضی جانی جارہی ہے، ملاقات کے دوران کسی کو موبائل فون لے جانے کی اجازت نہیں۔

نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے ملاقات کے موقع پر خصوصی تیاری کررکھی تھی۔ نوازشریف نے حسب سابق شلوار قمیض اور ویسٹ کوٹ زیب تن کیا اوران کی تیاری میں جیل حکام کی جانب سے فراہم کئے مشقتی نے اہم کردار ادا کیا ہے۔ مریم نواز بھی روایتی انداز میں تیار ہوئی ہیں۔

جیل حکام کی جانب سے نواز شریف کے ملاقاتیوں کی فہرست مرتب کی گئی تھی جس میں شریف خاندان کے 17 ارکان،  آصف کرمانی ، جاوید ہاشمی، پرویز رشید اور ایاز صادق سمیت 23 لیگی رہنما اور ن لیگ کے 11 وکلا بھی شامل تھے، تاہم جیل حکام نے نواز شریف اور مریم نواز سے ان کے وکلا کی ملاقات منسوخ کردی ہے۔ جیل حکام کا کہنا ہے کہ وکلا سے ملاقات بعد میں کرائی جائے گی۔


شیئر کریں