نواز شریف کی آمد: پنجاب حکومت کی رکاوٹیں: عوام پریشان

شیئر کریں

 

سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی آمد سے قبل حکومت پنجاب نے مسلم لیگ ن کی ریلیوں کو روکنے کے لیے انتظامات کئے ہیں۔ شہر لاہور کے تمام داخلی و خارجی راستوں کو کنٹینر لگا کر بند کیا گیا ہے۔ لاہور کی رن روڈ کی بندش کے آرڈر بھی جا ری ہو چکے ہیں۔ 

پولیس کی جانب سے لیگی کارکنوں کی گرفتاری کے لیے دو روز سے کریک ڈاون جاری ہے اور اب تک سینکڑوں لیگی کارکنوں کی گرفتاری کی اطلاع ہے۔ تاہم صرف 64 افراد کو پولیس کی جانب سے 16 ایم پی او کی دفعات کے تحت جیل بھیجا ہے جبکہ متعدد افراد کو حبس بے جا میں رکھا گیا ہے۔

پولیس کی جانب سے ایئر پورٹ جانے والے تمام راستوں کو بھی کنٹینر لگا کر بند کیا گیا ہے جس کی وجہ سے ایئر پورٹ جانے یا وہاں سے آنے والے افراد کو سخت تکلیف کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

لاہور شہر کے اندر بھی انتظامیہ کی جانب سے پھیلائی گئی بے یقینی کی وجہ سے لوگ پریشان ہیں۔ میڑو بس سروس بند کر دی گئی ہے اور شہر کی اہم شاہراہیں اگرچہ تادم تحریر کھلی ہیں مگر ان کی بندش کے خدشے سے پبلک ٹرانسپورٹ نہ ہونے کے برابر ہے۔

پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری لاہور ایئر پورٹ کے ارد گرد تعینات کی گئی ہے جہاں آج شام سوا 6 بجے تک نواز شریف اور ان کی بیٹی کی آمد متوقع ہے۔


شیئر کریں