وفاقی کابینہ کا اجلاس:اہم فیصلے متوقع

شیئر کریں

 وزیراعظم ہاؤس میں وفاقی کابینہ کا آج تیسرا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہوگا جس کا 9 نکاتی ترمیمی ایجنڈا بھی جاری کردیا گیا ہے۔ وفاقی حکومت نے کرمنل پروسیجر کوڈ میں اصلاحات، سول لا ریفارمز اور نیب قوانین میں تبدیلیوں کے لیے ٹاسک فورسز بنانے کا فیصلہ کیا ہے جب کہ وفاقی کابینہ ٹاسک فورس کےقیام کی منظوری دے گی۔

 وزیراعظم کے 100 روزہ پلان پر عملدرآمد کے بارے میں جامع نظام بنانے کی منظوری بھی دی جائے گی، جبکہ کابینہ وفاقی حکومت کے سینئر افسران کی تبادلوں کی توثیق کرے گی۔

وفاقی وزارتوں، محکموں اور ڈویژنز میں سادگی اور اخراجات میں کمی کا طریقہ کار بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور وزارت صحت کی اصلاحات کی سفارشات کی تیاری کیلئے ٹاسک فورس بنائی جائے گی۔ وفاقی حکومت نے ایف بی آر میں بڑی اصلاحات متعارف کرانے کا فیصلہ بھی کیا ہے، جس کے تحت ایف بی آر کے 3 ارکان کی نشستیں ختم کی جائیں گی۔

یاد رہے کہ وفاقی کابینہ اپنے پہلے اجلاس میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ ( ای سی ایل) میں ڈالنے کی منظوری دے چکی ہے۔

 وفاقی کابینہ کے 24 اگست کو ہونے والے اجلاس کے دوران  صدر، وزیراعظم، وزرا اور ارکان پارلیمنٹ کے صوابدیدی فنڈز ختم کرنے کی منظوری دی گئی۔ کابینہ کے اس اجلاس میں دفتری کام کے اوقات کار تبدیل کرنے کی بھی منظوری دی گئی۔ کام کے اوقات کار صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک کرنے کی منظوری دی گئی، جبکہ کابینہ کے بیشتر ارکان نے ہفتے کی چھٹی فی الحال ختم کرنے کی مخالفت کی جس کے بعد ہفتے کی چھٹی فی الحال ختم نہ کرنے کی منظوری دی گئی۔


شیئر کریں