یوم شہدائے پولیس عقیدت و احترام سے منایا جا رہا ہے

شیئر کریں

دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے پولیس کے افسران اور جوانوں کو خراج  عقیدت پیش کرنے کے لیے آج یوم شہدائے پولیس منایا جارہاہے۔ اس موقع پر لاہور، کراچی اور پشاور سمیت ملک کے تمام بڑے شہروں میں شہدائے پولیس کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے تقریبات منعقد کی گئیں۔ 

  لاہور میں یوم شہدائے پولیس کے موقع پر چیف ٹریفک آفیسر لیاقت ملک نے شہدا قبرستان میں کیپٹن ریٹائرڈ احمد مبین شہید کی قبر پر پھول چڑھائے اور فاتح خوانی کی۔ اس موقع پر پنجاب پولیس کے چاک و چوبند دستے نے شہدا کی قبروں پر سلامی بھی دی گئی۔ آئی جی پنجاب کلیم امام کا کہنا ہے کہ یوم شہدا منانے کا مقصد تجدید عہد اور عوام کی جان و مال کے تحفظ کے لیے جانوں کانذرانہ پیش کرنے والے قوم کے عظیم سپوتوں کوسلام پیش کرناہے۔ یوم شہداء پر پولیس اہلکاروں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ عوام کے جان و مال کی حفاظت کے لیے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے

کراچی میں اس موقع پر شہید پولیس اہلکاروں کے لیےقرآن خوانی اور دیگرتقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے۔ مختلف ہیڈ کوارٹرز میں سیمینارز اور تقاریب منعقد کی جائیں گی جبکہ شام میں سی ویو پرشہید اہلکاروں کی یاد میں شمعیں روشن کی جائیں گی۔ یوم شہدا پر آئی جی سندھ امجد جاوید سلیمی نے کہا کہ شہدائے پولیس اور ان کے کارنامے سندھ پولیس کی سنہری تاریخ کا حصہ بن گئے ہیں جو نئے آنے والے افسران اور جوانوں کیلئے مشعل راہ ہیں۔

خیبرپختونخوا میں یوم شہدائے پولیس کا آغاز شہید کمانڈنٹ ایف سی صفت غیور کی قبر پر سلامی دے کر کیا گیا جہاں آئی جی پولیس اور ڈپٹی کمانڈنٹ ایف سی نے پھولوں کی چارد بھی چڑھائی۔ اس موقع پر ڈپٹی کمانڈنٹ ایف سی عثمان ذکریا کا کہنا تھا کہ صفت غیور کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا، انہوں نے پولیس، آرمی، ایف سی اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی قربانیوں کو سلام پیش کیا۔ خیبرپختونخوا میں گزشتہ 10 سالوں کے دوران 1500 سے زیادہ پولیس اہلکار اپنے جانوں کا نذرانہ پیش کرچکے ہیں جن میں ایڈیشنل آئی جیز، اور ڈی آئی جیز سے کانسٹیبلز تک کے اہلکار شامل ہیں۔


شیئر کریں