پشاور،دہشت گرد افغانستان میں رابطے میں تھے

پشاور،دہشت گرد افغانستان میں رابطے میں تھے

نیوز ڈیسک…

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے سربراہ میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ پشاور میں آج زرعی یونیورسٹی پر حملہ کرنے والے دہشت گرد افغانستان میں اپنے ساتھیوں سے رابطے میں تھے۔

 پاک فوج کے ترجمان نے پشاور حملے سے متعلق بیان میں کہا کہ پولیس نے بہت اچھی جوابی کارروائی کی اور فورسز کی بروقت کارروائی سے تینوں دہشت گرد مارے گئے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ 8 بج کر 45 منٹ پر دہشت گرد رکشے سے ڈائریکٹوریٹ زراعت پہنچے تھے، تینوں دہشت گرد خودکش جیکٹ پہنے ہوئے تھے۔

میجر جنرل آصف غفور نے مزید بتایا کہ حملے کے وقت چالیس سے پچاس طلبا موجود تھے، جاں بحق افراد میں چوکیدار اور 7 طلبہ شامل ہیں، جاں بحق افراد میں سے 2 کی شناخت ابھی نہیں ہوسکی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ دہشت گرد افغانستان میں اپنے ساتھیوں سے رابطے میں تھے، ٹی ٹی پی کی ذمے داری قبول کرنا افغانستان سے دہشت گردی کا ثبوت ہے، دہشت گردی کرنے اور کرنے والے اس وقت افغانستان میں موجود ہیں۔

میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ افغانستان کےڈی جی ایم او وفد کے ہمراہ پاکستان میں ہیں، ان کے ساتھ بات چیت چل رہی ہے، آج کے حملے کے ثبوت افغان ڈی جی ایم او کو دیئے گئے ہیں۔